بابر اعظم، محمد رضوان نے شاندار اسٹینڈ کے ساتھ ریکارڈ بک توڑ ڈالی۔


محمد رضوان اور بابر اعظم کی جوڑی شاید اب تک کی بہترین T20 کرکٹ ہے اور انہوں نے ایک بار پھر کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں انگلینڈ کے خلاف دوسرے T20I میں اپنی مہاکاوی شراکت داری کے ساتھ ناقابل حصول کامیابی حاصل کی۔

200 رنز کے تعاقب میں کپتان نے 66 گیندوں پر 110 رنز بنائے جبکہ رضوان نے 51 گیندوں پر 88 رنز بنائے۔ ایک شاندار اسٹینڈ کے راستے میں، جوڑی نے اپنے اپنے ریکارڈ توڑ دیے اور ایک دوسرے کا دعویٰ کیا۔

انگلینڈ کے خلاف گرین کے ریکارڈ توڑ تعاقب میں مینز کے تمام اہم اعدادوشمار یہ ہیں۔

بغیر کوئی وکٹ کھوئے سب سے زیادہ کامیاب تعاقب

پاکستان نے بغیر کوئی وکٹ کھوئے 200 رنز کے ہدف کا تعاقب کیا جو کہ T20 کی تاریخ کا سب سے کامیاب تعاقب ہے۔ اس سے پہلے سب سے زیادہ 184 کولکتہ نائٹ رائیڈرز نے 2017 میں گجرات لائنز کے خلاف بنائے تھے، جبکہ ٹی ٹوئنٹی میں اس سے پہلے سب سے زیادہ 169 نیوزی لینڈ نے 2016 میں پاکستان کے خلاف بنائے تھے۔

انگلینڈ کے خلاف 200 کے ہدف کا تعاقب کرنے والی پہلی ٹیم

بابر اعظم کی پاکستان مردوں کے T20I میں انگلینڈ کے خلاف 200 یا اس سے زیادہ کے ہدف کا کامیابی سے تعاقب کرنے والی پہلی ٹیم بن گئی۔ 2018 میں برسٹل میں ہندوستان کا 199 رن کا تعاقب اس فارمیٹ میں انگلینڈ کے خلاف گزشتہ سب سے زیادہ تھا۔

T20 رنز کے تعاقب میں سب سے زیادہ اسٹینڈ

بابر اعظم اور محمد رضوان کے درمیان 203 رنز کی شراکت T20 کے تعاقب میں سب سے بڑا اسٹینڈ ہے۔ دونوں نے 197 کا اپنا ہی ریکارڈ توڑا جو انہوں نے گزشتہ سال سنچورین میں جنوبی افریقہ کے خلاف حاصل کیا تھا۔

انگلینڈ کو پہلی بار دس وکٹوں سے شکست

پاکستان نے T20I میں دس وکٹوں سے اپنی دوسری جیت کا دعویٰ کیا کیونکہ اس نے پچھلے سال T20 ورلڈ کپ کے دوران ہندوستان کو اسی مارجن سے شکست دی تھی۔ یہ پہلا موقع ہے جب انگلینڈ کو مردوں کے T20I میں دس وکٹوں سے شکست ہوئی ہے۔

پاکستان کے لیے 200 رنز بنانے والی پہلی جوڑی

بابر اور رضوان کے ٹی ٹوئنٹی میں پانچ 150 پلس سٹینڈز تھے جبکہ کسی اور جوڑی کے پاس پاکستان کے لیے ایک بھی نہیں ہے۔ ان کے 150 سے زیادہ رنز کے پانچ اسٹینڈز بھی تمام T20 کرکٹ میں کسی بھی جوڑی کے لیے سب سے زیادہ ہیں۔ وہ اب T20Is میں پاکستان کے لیے 200 رنز کا اسٹینڈ شیئر کرنے والی پہلی جوڑی بھی ہیں۔

بابر، رضوان 200 پلس کے کامیاب تعاقب میں نمایاں ہیں۔

مردوں کے T20Is میں پاکستان کی جانب سے 200+ کے کامیاب تعاقب کے تین واقعات سامنے آئے ہیں۔ تینوں تعاقب میں بابر اور رضوان کے درمیان 150 پلس کا ابتدائی اسٹینڈ نمایاں تھا۔ انہوں نے گزشتہ سال لاہور میں ویسٹ انڈیز کے خلاف 208 کے تعاقب میں 158 کا اضافہ کیا اور 2021 میں جنوبی افریقہ کے خلاف 204 کے تعاقب کے دوران 197 رنز کا اسٹینڈ بنایا۔

بابر – ایک سے زیادہ T20I سنچری بنانے والے واحد پاکستانی بلے باز

بابر اعظم نے اب ٹی ٹوئنٹی میں دو سنچریاں اسکور کی ہیں، اس فارمیٹ میں متعدد سنچریاں بنانے والے پہلے پاکستانی بلے باز ہیں۔ رضوان اور احمد شہزاد نے ٹی ٹوئنٹی میں مین ان گرین کی طرف سے ایک ایک سکور کیا۔

ایشیائی بلے باز کی طرف سے سب سے زیادہ ٹی ٹوئنٹی سنچریاں

بابر اعظم نے اب T20 میں سات سنچریاں اسکور کی ہیں، جو ایشیا کے کسی بھی بلے باز کی سب سے زیادہ ہے، جس نے روہت شرما، کے ایل راہول اور ویرات کوہلی کو پیچھے چھوڑ دیا ہے – تمام چھ سنچریاں۔

T20I میں ایک جوڑی کے ذریعہ سب سے زیادہ رنز

بابر اور رضوان اب مردوں کے T20Is میں ایک جوڑی کے طور پر سب سے زیادہ رنز بنانے کا ریکارڈ رکھتے ہیں۔ ان دونوں کے پاس اس وقت 36 اننگز میں 56.73 کی اوسط سے سات سنچریوں اور چھ نصف سنچریوں کے ساتھ 1929 رنز ہیں۔ انہوں نے شیکھر دھون اور روہت شرما کے 1743 رنز کی تعداد کو پیچھے چھوڑ دیا۔ پاکستانی جوڑی کے درمیان سات سنچریوں کا اسٹینڈ بھی اس فارمیٹ میں ایک ریکارڈ ہے۔

ایک ہی مقام پر تینوں فارمیٹس میں سنچری اسکور کرنا

بابر اعظم اب ایک ہی مقام پر تینوں بین الاقوامی فارمیٹس میں سنچری بنانے والے تیسرے بلے باز ہیں۔ بابر نے نیشنل اسٹیڈیم میں مختلف فارمیٹس میں سنچریاں بنائیں۔ وہ ایک مقام پر تینوں فارمیٹس میں سنچری بنا کر جوہانسبرگ کے وانڈررز میں فاف ڈو پلیسس اور ایڈیلیڈ اوول میں ڈیوڈ وارنر کی فہرست میں شامل ہو گئے۔

.



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published.