حکومت 23-2022 کے بجٹ میں نوجوانوں پر توجہ دے گی: احسن اقبال


منصوبہ بندی، ترقی اور خصوصی اقدامات کے وزیر احسن اقبال نے بدھ کو کہا کہ حکومت مالی سال 2022-23 کے آنے والے بجٹ میں ملک کے نوجوانوں کو خصوصی ترجیح دے رہی ہے، کیونکہ ان کے لیے بہت سے نئے اقدامات پر غور کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ بجٹ میں حکومت نوجوانوں کے لیے ہنر مندی کی تربیت کے متعدد منصوبے متعارف کرائے گی تاکہ وہ اپنی روزی روٹی کمانے کے ساتھ ساتھ ملکی پیداواری صلاحیت میں بھی حصہ ڈال سکیں۔

یہاں میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے وزیر نے کہا کہ بجٹ نوجوانوں کو آئندہ مالی سال میں روزگار کے مزید مواقع فراہم کرنے کے قابل بنائے گا۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ بجٹ میں حکومت تعلیم کے شعبے پر بھی خصوصی توجہ دے گی اور اعلیٰ تعلیم کے لیے مختص فنڈ میں اضافہ کرے گی۔

وزیر نے مزید کہا کہ آئندہ بجٹ میں کھیلوں اور تفریحی سرگرمیوں کے منصوبے بھی متعارف کرائے جائیں گے۔

چین پاکستان اقتصادی راہداری (CPEC) کے فلیگ شپ منصوبے کے حوالے سے احسن اقبال نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ حکومت کے چار سال کے دوران اس منصوبے کو نظر انداز کیا گیا کیونکہ پاکستان اور چین کی مشترکہ رابطہ کمیٹی کے بعد اس منصوبے پر ایک بھی جائزہ اجلاس نہیں ہوا۔ ستمبر 2021 میں۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت CPEC منصوبوں پر پندرہ روزہ جائزہ اجلاس منعقد کرتی تھی اور اب یہ معمول دوبارہ شروع کیا جا رہا ہے تاکہ CPEC کے تحت منصوبوں پر کام تیز کیا جا سکے۔

اقبال نے بتایا کہ انہوں نے پاکستان میں کام کرنے والی بہت سی چینی کمپنیوں کے نمائندوں سے ملاقات کی ہے، جنہوں نے بہت سے حل طلب مسائل کی شکایت کی تھی۔ وزیر نے کہا کہ انہوں نے ان کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

مزید برآں، انہوں نے کہا کہ حالیہ واقعات کو مدنظر رکھتے ہوئے، حکومت نے پاکستان میں کام کرنے والے چینیوں کے لیے فول پروف سیکیورٹی کو یقینی بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ گزشتہ حکومت کی جانب سے مالیاتی خسارے میں اضافے کی وجہ سے حکومت کو وفاقی ترقیاتی بجٹ میں صرف 500 ارب روپے کمی کرنا پڑی۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published.