دعا لیپا کا ایران میں مظاہروں پر ردعمل



ایرانی حکام اور ایک کرد حقوق گروپ نے بدھ کے روز مرنے والوں کی تعداد میں اضافے کی اطلاع دی ہے کیونکہ اخلاقی پولیس کے ہاتھوں حراست میں لی گئی ایک خاتون کی موت پر غصے نے پانچویں روز بھی مظاہروں کو ہوا دی اور سوشل میڈیا پر تازہ پابندیاں عائد کر دی گئیں۔

ایرانی کردستان سے تعلق رکھنے والی 22 سالہ مہسا امینی کی گزشتہ ہفتے حراست میں ہلاکت پر مظاہرے پھوٹ پڑے جنہیں تہران میں “غیر موزوں لباس” کے باعث گرفتار کیا گیا تھا۔

برطانوی گلوکارہ دعا لیپا نے سوشل میڈیا پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ ایران میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ ناقابل یقین حد تک ظالمانہ اور دل دہلا دینے والا ہے۔

“آر آئی پی ماشا امینی،” لیویٹنگ گلوکار نے لکھا۔

دعا لیپا کا ایران میں مظاہروں پر ردعمل



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published.