سی ٹی ڈی نے گٹکا فیکٹری سے ‘دہشت گردوں کے مشتبہ سہولت کار’ کو گرفتار کر لیا۔


کراچی: کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ (CTD) کے اہلکاروں نے کراچی میں ایک گٹکا فیکٹری پر چھاپے کے دوران ‘دہشت گردوں کے مشتبہ سہولت کاروں’ کو گرفتار کیا ہے۔، ARY نیوز نے جمعرات کو رپورٹ کیا۔

سی ٹی ڈی حکام کا کہنا ہے کہ کراچی کی پاک کالونی میں گٹکا بنانے والی فیکٹری پر چھاپہ مار کر 12 ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ ترجمان کے مطابق ‘کالعدم تنظیم سے وابستہ دہشت گردوں کے مشتبہ سہولت کار’۔

سی ٹی ڈی اہلکاروں نے ملزمان کے قبضے سے بھاری مقدار میں خطرناک سامان برآمد کر لیا۔

اس میں مزید کہا گیا کہ ‘ملزمان کا سرغنہ 2004 میں دہشت گردی اور پولیس پر حملے کے مقدمات میں مطلوب تھا۔’

منگل کو سی ٹی ڈی نے گرفتار کر لیا۔ دو مبینہ دہشت گرد جن کا تعلق ساہیوال میں چھاپے کے دوران کالعدم تنظیم سے تھا۔

مزید پڑھ: دادو میں سی ٹی ڈی نے کارروائی کرتے ہوئے ‘ایس آر اے’ کا مشتبہ دہشت گرد گرفتار کر لیا۔

مشتبہ دہشت گردوں کو سی ٹی ڈی اہلکاروں نے ساہیوال کے مڈھلی روڈ پر کارروائی کے دوران گرفتار کیا۔ چھاپہ مار ٹیم نے اسلحہ، دھماکہ خیز مواد اور ممنوعہ لٹریچر برآمد کر لیا۔

ترجمان سی ٹی ڈی کا کہنا ہے کہ گرفتار دہشت گرد شہر میں تخریب کاری کے منصوبے پر کام کر رہے تھے۔

اس سے قبل 7 ستمبر کو دی کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) سکھر حکام نے خیرپور کے قریب کارروائی کے دوران کالعدم تنظیم سے وابستہ دو مبینہ دہشت گردوں کو گرفتار کر لیا۔

سی ٹی ڈی کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ خیرپور کے قریب ایک چھاپے کے دوران عزیز ڈومکی اور مٹھا خان مکی نامی دو ‘دہشت گردوں’ کو گرفتار کیا گیا۔ دونوں مشتبہ افراد نے افغانستان میں دہشت گردی کی تربیت حاصل کی اور وہ ریاست مخالف سرگرمیوں میں ملوث تھے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ گرفتار افراد آئی ای ڈی اور دھماکہ خیز مواد کی تنصیب کے ماہر تھے۔ معلوم ہوا ہے کہ ملزمان مختلف شہروں میں عام شہریوں کی برین واشنگ اور انہیں افغانستان جانے میں سہولت کاری میں بھی ملوث تھے۔

مبینہ دہشت گرد صوبہ سندھ کے مختلف علاقوں میں دھماکہ خیز مواد کی سپلائی میں بھی ملوث تھے۔

تبصرے

.



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published.