پاکستان کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ اگست میں 42 فیصد کم ہو کر 0.7 بلین ڈالر رہ گیا۔



اسٹیٹ بینک آف پاکستان (SBP) نے بدھ کی رات دیر گئے کہا کہ پاکستان کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ (CAD) اگست میں کم ہو کر 0.7 بلین ڈالر رہ گیا، جو پچھلے مہینے کے 1.2 بلین ڈالر تھا۔ یہ ماہ بہ ماہ 41.67 فیصد کی کمی کے برابر ہے۔

مرکزی بینک نے ٹویٹ کیا کہ رواں مالی سال کے پہلے دو ماہ کے لیے، مالی سال 22 کے اسی عرصے کے مقابلے میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ $0.5bn کم ہوکر $1.9bn ہوگیا۔ اس کی بنیادی وجہ برآمدات میں $0.5bn کا اضافہ اور درآمدات میں $0.2bn کی کمی ہے۔

ایس بی پی کے اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ اشیا اور خدمات میں تجارت کا توازن بھی ماہ بہ ماہ 0.54 فیصد کم ہو کر 3.98 بلین ڈالر رہ گیا۔

اگست کے دوران اشیا کی درآمدات 5.75 بلین ڈالر رہی جو کہ پچھلے مہینے میں 5.35 بلین ڈالر تھی۔ دوسری طرف، برآمدات نمایاں طور پر بڑھ کر 2.81 بلین ڈالر تک پہنچ گئیں، جو جولائی میں 2.28 بلین ڈالر سے 23.38 فیصد بڑھ گئیں۔

کارکنوں کی ترسیلات زر گزشتہ ماہ کے 2.52 بلین ڈالر کے مقابلے میں 2.72 بلین ڈالر تک پہنچ گئیں۔

پاکستان نے پچھلے مالی سال میں 17.3 بلین ڈالر یا ماہانہ اوسطاً 1.44 بلین ڈالر کا زبردست کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ پوسٹ کیا۔

ایک کے مطابق، مرکزی بینک کو توقع ہے کہ اس سال CAD کم ہو کر 10 بلین ڈالر رہ جائے گا۔ میٹیس گلوبل رپورٹ



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published.